اہم خبریںبین الاقوامی

افغان سفیر کی بیٹی کا مبینہ اغوا ،افغان صدر نے اسلام آباد سے تمام سفارتی عملہ واپس بلا لیا

افغان میڈیا چینل نے افغان صدر مملکت کے مشیر وحید عمر کے بیان کا حوالہ دے کر دعویٰ کیا ہے کہ افغان صدر اشرف غنی نے اسلام آباد سے اپنے تمام سفارت کاروں کو ملک واپس بلا لیا ہے

اسلام آباد میں افغان سفیر کی بیٹی کے مبینہ اغوا اور تشدد کا معاملہ، افغان صدر اشرف غنی نے اسلام آباد سے تمام سفارتی عملہ واپس بلا لیا۔ تفصیلات کے مطابق سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹویٹر پر کیے گئے ایک ٹویٹ میں افغان میڈیا چینل نے افغان صدر مملکت کے مشیر وحید عمر کے بیان کا حوالہ دے کر دعویٰ کیا ہے کہ افغان صدر اشرف غنی نے اسلام آباد سے اپنے تمام سفارت کاروں کو ملک واپس بلا لیا ہے۔

اس حوالے سے وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید احمد نے حال ہی میں اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ افغان سفیر کی بیٹی کا کیس 72 گھنٹے میں حل ہوجائے گا اور جلد تمام تفصیلات سامنے آجائیں گی کہ اس معاملے میں کون ملوث ہیں، ابتدائی طور پر 3 ڈرائیورز سے تفتیش مکمل کرلی گئی، واقعے کی ایف آئی آربھی درج ہوچکی ہے، اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ 16 جولائی کو اسلام آباد میں افغان سفیر کی بیٹی کے ساتھ ہونے والے معاملے کی تحقیقات جاری ہیں اور یہ کیس 72 گھنٹے میں حل ہو جائے گا، اب تک کی تحقیقات سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ افغان سفیر کی بیٹی گھر سے پیدل نکلی اور ٹیکسی سے کھڈا مارکیٹ پہنچی، جیسے جیسے تحقیقات کر رہے ہیں کڑیاں مل رہی ہیں، افغان سفیر کی بیٹی کے کھڈا مارکیٹ سے راولپنڈی جانے کی تحقیقات کر رہے ہیں، اغوا کاروں کو گرفتار کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

وزیر داخلہ نے کہا کہ بھارت پاکستان کو بدنام کرنے کیلئے اپنے میڈیا کو استعمال کرتا ہے، بھارت نے افغان سفیر کی بیٹی کے اغوا کیس کو بہت اچھالا، وزیراعظم نے ہدایت کی کہ افغان سفیر کی بیٹی کے کیس کو ترجیحی بنیادوں پر حل کیا جائے ، وزیراعظم نے واقعہ میں ملوث ملزمان کو گرفتار کرنے کی ہدایت کی ہے۔ ادھر وفاقی دارالحکومت میں افغان سفیر کی بیٹی کے مبینہ اغوا اور تشدد کا مقدمہ اسلام آباد کے تھانہ کوہسار میں درج کرلیا گیا ، مقدمہ سیلسیلہ علی خیل کی مدعیت میں درج کیا گیا ہے، جس میں اغوا، تشدد اور دھمکیاں دینے کی دفعات کو شامل کیا گیا۔

اس ضمن میں لڑکی نے اپنے بیان میں بتایا کہ گھر سے کچھ فاصلے پر ٹیکسی میں سوار ہو کر شاپنگ کرنے گئی ، واپسی پر ایک اور ٹیکسی میں سوار ہوئی کچھ دیر بعد ٹیکسی رک گئی اور اچانک ہی ایک شخص آکر گاڑی میں بیٹھ گیا ، گاڑی میں بیٹھتے ہی نامعلوم شخص نے تشدد کرنا شروع کیا جس کے باعث میں بیہوش ہوگئی ، جب آنکھ کھلی تو گندگی کے ڈھیر پر تھی، گھر کی بجائے پارک چلی گئی اور والد کے آفس عملے کو بلایا اور وہ مجھے گھر لے گیا۔

Zaid Mehmood

جوانوں کو مری آہ سحر دے پھر ان شاہین بچوں کو بال و پر دے خدایا آرزو میری یہی ہے مرا نور بصیرت عام کر دے

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button