سیاسی

بچے ابھی کچھ وقت لگے گا‘ شاہ محمود قریشی کا بلاول کو ترکی بہ ترکی جواب

بچے کو لکھی لکھائی پرچیاں تھمادیتے ہیں اور یہ آٹو پر سٹارٹ ہوجاتا ہے، پیپلزپارٹی کے قائد نے کہا یہ مجھے جانتے ہیں، میں بھی اس کو جانتا ہوں اور اس کے بابا آصف زرداری کو بھی اچھی طرح جانتا ہوں۔ وزیرخارجہ کا چیئرمین پی پی کی تقریر تر شدید ردعمل

اسلام آباد (روزنامہ پنجاب اخبارتازہ ترین ۔ 30 جون2021ء ) پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری اور وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی قومی اسمبلی اجلاس میں آمنے سامنے آگئے۔ تفصیلات کے مطابق قومی اسمبلی اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے پہلے بلاول بھٹو زرادری نے شاہ محمود قریشی پر تنقیدی نشتر چلائے تو اس پر وزیر خارجہ بھلا کہاں خاموش رہ سکتے تھے، شاہ محمود قریشی نے بلاول کی تنقید کا ترکی بہ ترکی جواب دیا، انہوں چیئرمین پیپلزپارٹی کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ بچے کو لکھی لکھائی پرچیاں تھما دیتے ہیں اور یہ آٹو پر سٹارٹ ہوجاتا ہے، پیپلزپارٹی کے قائد نے کہا یہ مجھے اچھی طرح جانتے ہیں، میں بھی اس کو جانتا ہوں اور اس کے بابا آصف زرداری کو بھی اچھی طرح جانتا ہوں۔

انہوں نے کہا کہ بچہ بہت پریشان ہوگیا ، نہیں معلوم تھا میری ایک تقریر سے بچہ اتنا پریشان ہوجائے گا ، میں بچے کی پریشانی میں مزید اضافہ نہیں کرنا چاہتا، یہ آئینہ دکھاتے ہیں دیکھتے نہیں ہیں، بلاول بھٹو کونسی پارلیمانی روایات کی بات کرتے ہیں، سندھ میں اپوزیشن لیڈر کو بات نہیں کرنے دی گئی، کن قوانین کے تحت اپوزیشن لیڈر سندھ کو بولنے سے روکا گیا۔

اس سے پہلے چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان آئی ایس آئی کو شاہ محمود کے فون ٹیپ کرنے کا کہیں کیوں کہ انہوں نے ہمارے دور میں وزیر خارجہ ہوتے ہوئے دنیا بھر میں مہم چلائی کہ یوسف رضاگیلانی کو ہٹاکر انہیں وزیراعظم بنایا جائے جس پر انہیں وزارت سے نکالا گیا ، ابھی خان صاحب کو لگ پتا جائے گا کہ شاہ محمود کیا چیز ہیں، ملتان کے فاضل ممبر نے بار بار میرا نام لیا لیکن میں ان کا نام نہیں لوں گا، کیوں کہ میں ان کو اتنی اہمیت ہی نہیں دیتا ، جتنا ہم انہیں جانتے ہیں آپ نہیں جانتے۔

چیئرمین پیپلزپارٹی نے شاہ محمود قریشی کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے اس پارٹی پر تنقید کی جس نے انہیں وزیر خزانہ اور پنجاب کا صدر بنایا ، خان صاحب کو بتائیں اس شخص کو پہچانیں ، میں تو بچپن سے دیکھتا آرہا ہوں ، میں نے انہیں بچپن سے جئے بھٹو کا نعرہ لگاتے دیکھا ، انہیں وزارت بچانے کے لیے ’اگلی باری پھر زرداری‘ کا نعرہ لگاتے ہوئے دیکھا ، آپ دیکھیں گے یہ آپ کے وزیراعظم کے ساتھ کیا کرتے ہیں۔

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!

Zaid Mehmood

جوانوں کو مری آہ سحر دے پھر ان شاہین بچوں کو بال و پر دے خدایا آرزو میری یہی ہے مرا نور بصیرت عام کر دے

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button