پاکستانسیاسی

گلگت بلتستان انتخابات:اپوزیشن اپنی ہار کو دیکھ کر دھاندلی کا شور مچارہی ہے. شبلی فراز

گلگت بلتستان انتخابات:اپوزیشن اپنی ہار کو دیکھ کر دھاندلی کا شور مچارہی ہے. شبلی فراز

اپوزیشن صرف ایسے انتخابات شفاف ہوتے ہیں جن میں وہ جیتے‘صاف اور شفاف الیکشن کو یقینی بنائیں گے .وفاقی وزیر اطلاعات کا اسلام آباد میں پریس کانفرنس سے خطاب

 اسلام آباد(روزنامہ پنجاب اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔14 نومبر ۔2020ء) وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات شبلی فراز نے کہا ہے کہ گلگت بلتستان کے انتخابات میں متوقع ہار کی وجہ سے اپوزیشن کا دھاندلی کا شور مچا رہی ہے اپوزیشن صرف ایسے انتخابات شفاف ہوتے ہیں جن میں وہ جیتے . اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے شبلی فراز نے کہا کہ سب سے پہلے گلگت کے عوام کا شکریہ ادا کرتا ہوں جس طرح انہوں نے انتخابی مہم کو چلایا اور مہم میں حصہ لیا اور وہاں پر امن و امان کی کوئی صورتحال پیدا نہیں ہوئی جس کا حکومت کی طرف سے شکریہ ادا کرنا چاہتا ہوں.
(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان میں تمام سیاسی جماعتوں نے انتخابی مہم میں حصہ لیا، گلگت بلتستان کے عوام نے تحریک انصاف کو بہت پذیرائی دی ہے اور پی ٹی آئی قیادت کا والہانہ استقبال اس بات کی گواہی ہے کہ عوام نے الیکشن سے پہلے ہی اپنا فیصلہ سنا دیا. انہوں نے کہا کہ گلگت کے عوام نے پی ٹی آئی کے جلسوں میں تاریخی شرکت کی، اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ وہ علاقے کے مسائل کے حل کے لیے کچھ کرنا چاہتے ہیں وفاقی وزیر اطلاعات نے کہا کہ اپوزیشن جماعتوں کے گٹھ جوڑ نے وہاں پر جن مسائل کا ذکر کیا اور ساتھ ساتھ اس بات کو تسلیم کیا کہ ماضی کی حکومتوں نے گزشتہ 10 سال میں علاقے کے مسائل کے حل کے لیے کچھ نہیں کیا، تو کیا وجہ ہے کہ جس طرح کا ماحول بنایا جارہا ہے کہ اپوزیشن کی تقاریر اور بیانات سے لگتا ہے کہ وہ اپنی شکست کو دھاندلی کا نام دیں گے اور ان کا دھاندلی کا رونا ہار سے بچنے کے لیے ہے.
انہوں نے کہا کہ میڈیا، گلگت بلتستان انتخابات کی بھرپور کوریج کرے اور صورتحال پر نظر رکھے اور کوریج کے لیے وہاں پر پولنگ اسٹیشنز پر بھی جائے انہوں نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف ایسی جماعت ہے جس نے صاف و شفاف انتخابات کے لیے جدوجہد کی ہے، ہمارا یہی ایجنڈا تھا کہ انتخابات صاف اور شفاف ہونے چاہئیں. شبلی فراز نے کہا کہ ان لوگوں کا عجیب رویہ ہے کہ جس الیکشن میں اپوزیشن کامیاب ہو وہ درست ورنہ سارا عمل غلط، اسی طرح اگر جج بھی ان کے حق میں فیصلہ دیں تو وہ صحیح ورنہ غلط انہوں نے کہا کہ ماضی کے ریکارڈ پر یہ اعتبار نہیں کر رہے ہیں، کچھ موروثی راہنما ہیں جن کی سوچ میں تضاد ہے، یہ اقتدار کی ہوس میں مبتلا ہیں ان کی سوچ جمہوری نہیں جبکہ جمہوریت کا لبادہ اوڑھے مسلم لیگ (ن) منتخب حکومت کے خاتمے کے لیے غیر آئینی طریقہ اپنا رہی ہے.
انہوں نے کہا کہ اپوزیشن ہر معاملے پر جھوٹ بول رہی ہے، ان کے بیانیے روز تبدیل ہو رہے ہیں، یہ لوگ اقتدار کو عوام کی بھلائی کے لیے نہیں اپنی کرپشن بچانے اور دولت بڑھانے کے لیے استعمال کرتے ہیں. ملک میں مہنگائی کے حوالے سے وفاقی وزیر نے کہا کہ مہنگائی عارضی چیز ہے، اشیا کی قیمتوں میں کمی کے لیے اقدامات جاری ہیں، حکومت پٹرول کی قیمت کم کرنے جارہی ہے جبکہ کورونا کی صورتحال نہ ہوتی تو معاشی صورتحال مزید بہتر ہوتی.

Zaid Mehmood

صحافت دراصل اس چراغ کی مانند ہے جو اندھیری رات میں مسافر کی راہنمائی کرتا ہے خبر کی سچائی، بے لوث اور بے لاگ تجزیہ اس چراغ کی تیل بتی ہوتا ہے جس سے تشکیل پاتی روشنی قوم کے مزاج کی نہ صرف تعمیر کرتی ہے بلکہ اس کے مزاج کا پتہ بھی دیتی ہے

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button